لاگ ان
ہفتہ 16 جمادی الاول 1444 بہ مطابق 10 دسمبر 2022
لاگ ان
ہفتہ 16 جمادی الاول 1444 بہ مطابق 10 دسمبر 2022
لاگ ان / رجسٹر
ہفتہ 16 جمادی الاول 1444 بہ مطابق 10 دسمبر 2022
ہفتہ 16 جمادی الاول 1444 بہ مطابق 10 دسمبر 2022

سوال:السلام علیکم!دو تشہد کے ساتھ وتر پڑھنے پر اگر کوئی حدیث ہے تو اس کا حوالہ مطلوب ہے۔

الجواب باسم ملهم الصواب

عَنْ سَعْدِ بْنِ هِشَامٍ، أَنَّ عَائِشَةَ حَدَّثَتْهُ، «أَنَّ رَسُولَ اللَّهِ صَلَّی اللهُ عَلَيْهِ وَسَلَّمَ كَانَ لَا يُسَلِّمُ فِي رَكْعَتَيِ الْوِتْرِ»(السنن النسائی،باب كيف الوتر بثلاث)ترجمہ:’’حضرت عائشہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہﷺ وتر کی دو رکعتوں پر سلام نہیں پھیرتے تھے‘‘۔

ایک اور حدیث میں ہے:عَنْ عَبْدِ اللهِ بْنِ مَسْعُودٍ , قَالَ: «الْوِتْرُ ثَلَاثٌ كَوِتْرِ النَّهَارِ صَلَاةِ الْمَغْرِبِ»(شرح معاني الآثار،باب الوتر) ترجمه:’’حضرت عبداللہ بن مسعود رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ وتر تین رکعات ہے دن کے وتر یعنی مغرب کی نماز کی طرح‘‘۔ لہذا ان دو روایات سے معلوم ہوا کہ وتر کی نماز تین رکعات ہے اور ان میں دوسری رکعت پر تشہد اور تیسری رکعت کے بعد سلا م پھیرنا لازم ہے۔

والله أعلم بالصواب

فتویٰ نمبر4165 :

لرننگ پورٹل