لاگ ان / رجسٹر
ہفتہ 20 شوال 1443 بہ مطابق 21 مئی 2022
لاگ ان / رجسٹر
ہفتہ 20 شوال 1443 بہ مطابق 21 مئی 2022
لاگ ان / رجسٹر
ہفتہ 20 شوال 1443 بہ مطابق 21 مئی 2022
ہفتہ 20 شوال 1443 بہ مطابق 21 مئی 2022

ایک پوسٹ موصول ہوئی جس میں چالیس اقوال رسول اللہ ﷺ کی طرف منسوب کرکے نقل کیے گئے ہیں، ان کے بارے میں بتائیے کیا یہ صحیح ہیں؟

1۔ فجر اور اشراق ، عصر اور مغرب اور مغرب اور عشاء کے دوران سونے سے باز رہا کرو۔

2۔ بد بودار اور گندے لوگوں کے ساتھ نہ بیٹھا کرو۔

3۔ ان لوگوں کے درمیان نہ سوئیں جو سونے سے قبل باتیں کرتے ہیں۔

4۔ تم بائیں ہاتھ سے نہ کھاؤ۔

5۔ منہ سے کھانا نکال کر نہ کھاؤ۔

6۔ اپنے کھانے پر اداس نہ ہوا کرو یہ عادت ہمارے اندر ناشکری پیدا کرتی ہے۔

7۔ گرم کھانے کو پھونک سے ٹھنڈا نہ کرو۔

8۔ اندھیرے میں مت کھاؤ۔

9۔ کھانے کو سونگھا نہ کرو، کھانے کو سونگھنا بد تہذیبی ہوتی ہے۔

10۔ منہ بھر کے نہ کھاؤ کیونکہ اس سے معدہ کی ذمہ داری بڑھ جاتی ہے۔

11۔ ہاتھ کے کڑاکے نہ نکالا کرو۔

12۔ جوتے پہنے سے قبل اسے جھاڑ لیا کرو۔

13۔ نماز کے دوران آسمان کی طرف نہ دیکھو۔

14۔ رفع حاجت کی جگہ ( ٹوائلٹ ) میں مت تھوکو۔

15۔ لکڑی کے کوئلے سے دانت صاف نہ کرو۔

16۔ اپنے دانتوں سے سخت چیز مت توڑا کرو۔

17۔ ہمیشہ بیٹھ کر کپڑے تبدیل کرو۔

18۔ دوسرے کے عیب تلاش نہ کرو۔

19۔ بیت الخلاء میں باتیں نہ کیا کرو۔

20۔ دوست کو دشمن نہ بناؤ۔

21۔ دوستوں کے بارے میں جھوٹے قصے بیان نہ کیا کرو۔

22۔ ٹھہر کر صاف بولا کرو تاکہ بات دوسرے پوری طرح سمجھ جائیں۔

23۔ چلتے ہوئے بار بار پیچھے مڑکر نہ دیکھو۔

24۔ ایڑھیاں مار کر نہ چلا کرو۔

25۔ ایڑھیاں مار کر چلنا تکبر کی نشانیوں میں سے ہے۔

26۔ کسی کے بارے میں جھوٹ نہ بولو۔

27۔ شیخی نہ بگھارو۔

28۔ اکیلے سفر نہ کیا کرو۔

29۔ اچھے کاموں میں دوسروں سے مدد کیا کرو۔

30۔ فیصلے سے پہلے مشورہ ضرور کیا کرو۔ اور مشورہ ہمیشہ سمجھدار کی بجائے تجربہ کار شخص سے کرنا چاہیے۔

31۔ کبھی غرور نہ کرو۔ غرور ایک ایسی بُری عادت ہے جس کا نتیجہ کبھی اچھا نہیں نکلتا۔

32۔ گداگروں کا پیچھانہ کرو۔

33۔ غربت میں صبر کیا کرو۔

34۔ مہمان کی کھلے دل سے خدمت کرو یہ عادت ہماری شخصیت میں کشش پیدا کردیتی ہے۔

35۔ برا کرنے والوں کے ساتھ ہمیشہ نیکی کرو۔

36۔ اللہ پاک نے جو دیا ہے اس پر خوش رہو۔

37۔ زیادہ نہ سویا کرو۔ زیادہ نیند یاداشت کو کمزور کردیتی ہے۔

38۔ اقامت اور اذان کے درمیان گفتگو نہ کرو۔

39۔ اپنی خامیوں پر غور کیا کرو اور توبہ کیا کرو۔

40۔ روزانہ کم از کم سوبار استغفار کیا کرو۔

الجواب باسم ملهم الصواب

درج بالا باتوں میں سے کچھ باتیں بعینہ کسی حدیث کا ترجمہ ہیں، کچھ باتیں کسی نہ کسی حدیث یا آیت کا مفہوم ہیں اور کچھ باتیں سیرت نبویہ سے ماخوذ ہیں۔ اس لیے ان سب باتوں کو حدیث کہہ کر بیان کرنا درست نہیں ہے، بلکہ کسی مستند عالم کی خدمت میں پیش کرکے جن احادیث کی تصدیق ہوجائے ان کی اشاعت کرنا چاہیے۔ 

والله أعلم بالصواب

فتویٰ نمبر4263 :

لرننگ پورٹل