لاگ ان
منگل 20 ذوالقعدہ 1445 بہ مطابق 28 مئی 2024
لاگ ان
منگل 20 ذوالقعدہ 1445 بہ مطابق 28 مئی 2024
لاگ ان / رجسٹر
منگل 20 ذوالقعدہ 1445 بہ مطابق 28 مئی 2024
منگل 20 ذوالقعدہ 1445 بہ مطابق 28 مئی 2024

مولانا احمد رضا خاں بریلوی رحمۃ اللہ علیہ
عالمِ دین و عظیم اردو نعت گو شاعر المتوفیٰ ۱۹۲۱ء

نعتِ رسولﷺ


شکرِ خدا کہ آج گھڑی اُس سفر کی ہے
جس پر نثار جان فلاح و ظفر کی ہے
گرمی ہے، تپ ہے، درد ہے، کلفت سفر کی ہے
نا شکر! یہ تو دیکھ عزیمت کدھر کی ہے
کس خاکِ پاک کی تو بنی خاکِ پا شفا
تجھ کو قسم جنابِ مسیحا کے سر کی ہے
ماہِ مدینہ اپنی تجلّی عطا کرے!
یہ ڈھلتی چاندنی تو پہر دو پہر کی ہے
شکلِ بشر میں نورِ الٰہی اگر نہ ہو!
کیا قدر اُس خمیرۂ ما و مدر کی ہے
بے اُن کے واسطے کے خدا کچھ عطا کرے
حاشا غلط غلط یہ ہوس بے بصر کی ہے
مقصود یہ ہیں آدم و نوح و خلیل سے
تخمِ کرم میں ساری کرامت ثمر کی ہے
اُن پر دُرود جن کو حجر تک کریں سلام
اُن پر سلام جن کو تحیّت شجر کی ہے
اُن پر دُرود جن کو کسِ بے کساں کہیں
اُن پر سلام جن کو خبر بے خبر کی ہے
جنّ و بشر سلام کو حاضر ہیں اَلسَّلَام
یہ بارگاہ مالکِ جنّ و بشر کی ہے
شمس و قمر سلام کو حاضر ہیں اَلسَّلَام
خوبی انھیں کی جوت سے شمس و قمر کی ہے
سب بحر و بر سلام کو حاضر ہیں اَلسَّلَام
تملیک اُنھیں کے نام تو ہر بحر و بر کی ہے
سنگ و شجر سلام کو حاضر ہیں اَلسَّلَام
کلمے سے تر زبان درخت و حجر کی ہے
مومن ہوں، مومنوں پہ رَءُوفٌ رَّحِیم ہو
سائل ہوں، سائلوں کو خوشی لا نَہَر کی ہے
دامن کا واسطہ مجھے اُس دھوپ سے بچا
مجھ کو تو شاق جاڑوں میں اِس دوپہر کی ہے

*****

لرننگ پورٹل