لاگ ان / رجسٹر
بدھ 17 شوال 1443 بہ مطابق 18 مئی 2022
لاگ ان / رجسٹر
بدھ 17 شوال 1443 بہ مطابق 18 مئی 2022
لاگ ان / رجسٹر
بدھ 17 شوال 1443 بہ مطابق 18 مئی 2022
بدھ 17 شوال 1443 بہ مطابق 18 مئی 2022

سوال:السلام علیکم! کیا تراویح نہ پڑھنے کا گناہ ہوتا ہے؟ اگر کوئی بغیر کسی وجہ کے تراویح نہ پڑھے تو کیا اس کو گناہ ملے گا؟

الجواب باسم ملهم الصواب

تراویح سنت موکدہ ہے اور اس کا بغیر کسی عذر کے چھوڑنا گناہ ہے جو شخص تراویح کو ضروری نہ سمجھے یا بلا کسی عذر اس کو چھوڑدینے کو جائز سمجھے وہ بڑی غلطی میں مبتلا ہے۔(1)

 ۔رجل ترك سنن الصلاة إن لم ير السنن حقا فقد كفر لأنه تركها استخفافا وإن رآها حقا فالصحيح أنه يأثم لأنه جاء الوعيد بالترك (الفتاویٰ الھندیۃ،کتا ب الصلاۃ،الباب التاسع في النوافل ، ومن المندوبات صلاة الضحی)
 أما صفتها فهي سنة كذا روی الحسن عن أبي حنيفة أنه قال : القيام في شهر رمضان سنة لا ينبغي تركها(بدائع الصنائع،کتاب الصلاۃ،فصل السنة إذا فاتت عن وقتها هل تقضی أم لا )

والله أعلم بالصواب

فتویٰ نمبر1199 :

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

لرننگ پورٹل