لاگ ان / رجسٹر
بدھ 17 شوال 1443 بہ مطابق 18 مئی 2022
لاگ ان / رجسٹر
بدھ 17 شوال 1443 بہ مطابق 18 مئی 2022
لاگ ان / رجسٹر
بدھ 17 شوال 1443 بہ مطابق 18 مئی 2022
بدھ 17 شوال 1443 بہ مطابق 18 مئی 2022

درج ذیل حدیث کی تخریج مطلوب ہے: 

’’القرآن والسلطان توأمان لا يفترقان فالقران أُس والسلطان حارس فمن لا أُس له فمُنهدم ومن لا حارس له فضائع‘‘.

الجواب باسم ملهم الصواب

سوال میں مذكور روایت تلاش بسیار کے باوجود کسی کتاب میں نہیں ملی، البتہ الفردوس بماثور الخطاب میں دیلمی نے درج ذیل روایت حضرت عبد اللہ بن عباس کے حوالے سے نقل کی ہے:عن ابْن عَبَّاس: الْإِسْلَام وَالسُّلْطَان أَخَوان لَا يصلح وَاحِد مِنْهُمَا إِلَّا بِصَاحِبِهِ فالإسلام أَمِين وَالسُّلْطَان حارس وَمَا لَا أَمِين لَهُ منهدم ومالا حارس لَهُ ضائع. (الفردوس بمأثور الخطاب، باب الألف، رقم: 396) ترجمہ: ’’اسلام اور بادشاہ دونوں بھائی ہیں، ان میں سے کوئی بھی ایک دوسرے کے بغیر قائم نہیں رہ سکتا، اسلام امانتدار ہے اور بادشاہ رکھوالا ہے، تو جس کا کوئی امین نہیں وہ منہدم ہو جاتا ہے اور جس کا کوئی رکھوالا نہ ہو وہ ضائع ہو جاتا ہے۔‘‘

لیکن امام حسن بن محمد الصغانی اور امام عجلونی رحمہما اللہ نے اس روایت کو بھی موضوع قرار دیا ہے۔فلہذا سوال میں مذکور روایت کو حدیث کہہ  کر بیان کرنا جائز نہیں۔

وَأَحَادِيث شهر بن حَوْشَب كَذَلِك [وَالله أعلم]. فَمن الْأَحَادِيث الْمَوْضُوعَة قَوْلهم . . . وَقَوْلُهُمْ: [الْمُلْكُ وَالدِّينُ تَوْأَمَانِ]. (الموضوعات للصغانی، ص: 36، ط: دار المأمون، وكشف الخفاء، حرف الميم)

والله أعلم بالصواب

فتویٰ نمبر4038 :

لرننگ پورٹل