لاگ ان / رجسٹر
جمعہ 26 شوال 1443 بہ مطابق 27 مئی 2022
لاگ ان / رجسٹر
جمعہ 26 شوال 1443 بہ مطابق 27 مئی 2022
لاگ ان / رجسٹر
جمعہ 26 شوال 1443 بہ مطابق 27 مئی 2022
جمعہ 26 شوال 1443 بہ مطابق 27 مئی 2022

 بہی کھانے کے فوائد کے حوالے سے درج ذیل احادیث کی تحقیق فرمادیں۔ 

حضور ﷺ نے فرمایا: بہی کھاؤ، کیونکہ وہ دل کے دورے کو ٹھیک کرکے سینہ سے بوجھ اتار دیتا ہے۔ حضرت انس بن مالک رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ رسول اللہ ﷺ نے فرمایا: بہی کھانے سے دل پر سے بوجھ اتر جاتا ہے۔ اسی طرح ایک اور روایت میں ہے کہ اللہ تعالی نے کوئی نبی ایسا نہیں مبعوث فرمایا جنہیں جنت کا بہی نہ کھلایا ہو، کیونکہ یہ فرد کی قوت کو چالیس افراد کے برابر کردیتا ہے۔ مزید یہ بھی ایک روایت ہے کہ اپنی حاملہ عورتوں کوبہی کھلایا کرو، کیونکہ یہ دل کی بیماریوں کو ٹھیک کرتا ہے اور لڑکے کو حسین بناتا ہے۔ 

الجواب باسم ملهم الصواب

بہی ایک مفید پھل ہے اس کے فوائد پر مشتمل بعض روایات صحیح اور بعض ضعیف ہیں  طب نبوی میں بھی اس کے کئی فوائد بیان کئے گئے ہیں ، تاہم ان روایات میں جو حکم دیا گیا ہے اس کی حیثیت ایک مشورہ کی ہے، اس بات کو مد نظر رکھ کر بہی کا استعمال جائز ہے۔ 

المستدرك علی الصحيحين للحاكم (3/ 418)

عن طلحة بن عبيد الله قال: دخلت علی رسول الله صلی الله عليه وسلم، وفي يده سفرجلة فرماها إلي أو، قال: ألقاها إلي، وقال: «دونكها أبا محمد، فإنها تجم الفؤاد» هذا حديث صحيح الإسناد، ولم يخرجاه "

[التعليق – من تلخيص الذهبي] 5592 صحيح (المستدرك علی الصحيحين للحاكم (3/ 418)

ترجمہ: حضرت طلحہ بن عبید سے روایت ہے فرمایا: میں رسول اللہ ﷺ سے پاس حاضر ہوا تو آپ کے ہاتھ میں بہی بھل تھا تو وہ آپ نے میری طرف بڑھایا اور فرمایا: اے ابو محمد اس کو لے لو کہ یہ دل کو مضبوط کرتا ہے ۔

اس حدیث کو امام حاکم اور امام ذہبی نے صحیح فرمایا ہے ۔ اس کے علاوہ کئی روایات اس کے بارے میں مشہور ہیں جن کو محدثین کرام نے ضعیف فرمایا ہے ۔ 

كنز العمال (10/ 40)

"كلوا السفرجل فإنه يجلي عن الفؤاد ويذهب بطخاء1 الصدر ". ابن السني وأبو نعيم – عن جابر.

ترجمہ: بہی کھاؤ یہ دل کو منور کرتا ہے اور سینے کے بوجھ کو ختم کرتا ہے ۔

28259- "كلوا السفرجل علی الريق فإنه يذهب وغر2 الصدر". ابن السني وأبو نعيم، "فر" عن أنس. كنز العمال (10/ 40)

نہار منہ بہی کھاؤ یہ سینے کی حرارت کو دور کرتا ہے ۔

28260- "كلوا السفرجل فإنه يجم الفؤاد ويشجع القلب ويحسن الولد". "فر" عن عوف بن مالك. كنز العمال (10/ 40)

ترجمہ: بہی کھایا کرو کیونکہ یہ دل کو قوت دیتا ہے ، شجاعت و بہادری پیدا کرتا ہے اور بچے کو(ماں کے پیٹ میں)حسین بناتا ہے۔

ان روایات کے بارے میں علامہ مناوی فرماتے ہیں:

(ابن السني وأبو نعيم) معا في الطب (فر عن أنس) وفيه محمد بن موسی الحوشي قال الذهبي: قال أبو داود: ضعيف عن عيسی بن شعيب قال ابن حبان: يستحق الترك (فیض القدیر)

اس حدیث میں محمد بن موسی الحوشی ہیں جن کے بارے میں امام ذہبی امام ابو داود کے حوالے سے فرماتے ہیں : یہ عیسی بن شعیب سے زیادہ ضعیف ہیں ابن حبان نے فرمایا کہ یہ قابل ترک ہیں۔

(فر عن عوف بن مالك) وفيه عبد الرحمن العرزمي أورده الذهبي في الضعفاء ونقل تضعيفه عن الدارقطني قال ابن الجوزي: ليس لخبر السفرجل مدار يرجع إليه وقال ابن القيم: روي في السفرجل أحاديث هذا منها ولا تصح (فیض القدیر)

عوف بن مالک کے حوالے سے جو روایت ہے اس میں عبد الرحمن العزمی ہیں ذہبی نے اس کو ضعفاء میں شمار کیا ہے اور دارقطنی کے حوالے سے ان کی تضعیف نقل کی ہے ابن جوزی فرماتے ہیں بہی سے متعلق کسی روایت پر مدار نہیں جس کی طرف رجوع کیا جائے ابن قیم فرماتے ہیں کہ بہی کے بارے میں بہت سی روایات منقول ہیں اور یہ حدیث بھی انہیں میں سے ہے اور صحیح نہیں ہے۔

باقی سوال میں جس چالیس آدمیوں کی طاقت ملنے والی روایت کا ذکر ہے وہ تلاش کے باوجود نہیں ملی۔

والله أعلم بالصواب

فتویٰ نمبر4445 :

لرننگ پورٹل